Take a fresh look at your lifestyle.

مردے کا ویڈیولوڈ کر کے برے پھنسے بابل سپریو

0

کولکاتا,25اپریل:ایم آر بانگور اسپتال کا ویڈیو وائرل ہوتے ہی ویڈیو اپ لوڈ کرنے والے کو قتل کرنے کی دھمکی دی جانے لگی ہے۔ اس حالت کے لئے اس نوجوان نے آسنسول کے بی جے پی ایم پی بابل سپریو کو کٹہرے میں لا کھڑاکیاہے۔چند دنوں قبل سوشل میڈیا پر ایک ویڈیووائرل ہواتھا۔ جس میں ایک آوازریکارڈ کی گئی تھی۔اس میں دعوی کیا گیا ہے کہ یہ بانگور آ سولیشن وارڈ کی تصویر ہے۔ جہاں کرونا کے مشتبہ مریضوں کے بیڈ کے پاس ہی لاشیں پڑی ہیں۔ ریکارڈ میں دعوی کیا گیا ہے۔ اسپتال میں بھرتی کے بعد سے انہوں نے 5اموات دیکھی ہے۔ ان میںسے ہر کسی کو سانس لینے میں دشواری ہو رہی تھی۔ لیکن لاشیں ہٹائی نہیں جا رہی ہیں۔ بابل سپریو نے اس ویڈیو کو ریٹوئٹ کیا۔ اس ویڈیو کو لے کر انہوں نے وزیر اعلی ممتا بنرجی سے جانچ کی درخواست کی۔دوسری طرف ایک حلقے نے ویڈیو کی سچائی پرلے کرسوال اٹھایا ہے۔ انہیں جواب دینے کے لئے بابل سپریو نے اس شخص کا نام,پتہ,اس کی شناخت اور اس کا موبائل نمبر پوسٹ جڑ دیا۔اس کے بعد ہی معاملہ سنگین ہو گیا ہے۔ بابل سپریو کے مطابق اس شخص کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ بابل سپریو نے بتایا کہ ایم ار بانگور اسپتال کے ویڈیو میں جس شخص کی آواز سنی جارہی ہے۔اس کا کرونا رپورٹ نگیٹیو آنے کے بعد اسے اسپتال سے ریلیز کر دیا گیاہے۔۔لیکن کولکاتا پولس نے اس شخص کے خلاف شکایت درج کرکے اسے حراست میں لے لیا ہے۔لیکن کولکاتا پولس نے مرکزی وزیر کے اس دعو ے کو مسترد کردیا ہے۔لیکن ا س نوجوان کا کہنا ہے کہ اسپتال سے چھٹی ملنے کے بعد اس کے لئے گھر جانا مشکل ہوگیا ہے۔ اسے قتل کی دھمکی جارہی ہے۔ اس نوجوان کا کہنا ہے کہ وہ ذاتی طو ر پر بابل سپریو کو پہچانتا نہیں ہے۔ میرا ذاتی شناخت ظاہر کرنے کا حق انہیں کس نے دیا۔ اخری اطلاع ملنے تک پولس کی مداخلت پر وہ شخص گھر واپس لوٹا ہے۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Leave A Reply

Your email address will not be published.