Take a fresh look at your lifestyle.

امیت شاہ کا5نومبر کو دو روزہ بنگال دورہ جے پی نڈا کا دورہ منسوخ

کولکاتا،31،اکتوبر: مغربی بنگال میں 2021 میں اسمبلی انتخابات ہونے جارہے ہیں۔ جبکہ بی جے پی ریاست میں اقتدار حاصل کرنے کی کوشش کر رہی ہے ، ممتا بنرجی کی ترنمول کانگریس (ٹی ایم سی) اقتدار برقرار رکھنے کےلئے طاقت کا مظاہرہ کررہی ہے۔ اس کے لئے تیاریاں شروع کردی گئی ہیں۔ بنگال میں بی جے پی کی کمان خود مرکزی وزیر داخلہ امیت شاہ نے سنبھال لی ہے۔ وہ 2021 کے اسمبلی انتخابات سے قبل پارٹی کے تنظیمی امور کا جائزہ لینے کے لئے 5 نومبر سے مغربی بنگال کا دو روزہ دورہ کریں گے۔ پارٹی ذرائع نے یہ اطلاع دی۔ اس سے قبل یہ خبر موصول ہوئی تھی کہ بی جے پی صدر جے پی نڈا بنگال جارہے ہیں۔مغربی بنگال بی جے پی کے جنرل سکریٹری سیانتن باسو نے کہا کہ قومی صدر جے پی نڈا کا طے شدہ دورہ 6 نومبر سے منسوخ کردیا گیا ہے۔ فیصلہ کیا گیا ہے کہ امت شاہ دو روزہ دورے پر 5 نومبر سے مغربی بنگال کا دورہ کریں گے۔ انہوں نے کہاکہ توقع کی جارہی ہے کہ وہ 5 نومبر کو ضلع مدنی پور کا دورہ کریں گے اور اگلے دن وہ ریاستی پارٹی قائدین سے ملاقات کریں گے۔ پروگرام کو ابھی حتمی شکل نہیں دی گئی ہے۔ بی جے پی کے قومی جنرل سکریٹری اور بنگال انچارج کیلاش وجئے ورگیہ نے کہا کہ امیت شاہ تنظیم کے مختلف پہلوو¿ں کا جائزہ لیں گے اور آئندہ اسمبلی انتخابات کےلئے پارٹی کی حکمت عملی پر تبادلہ خیال کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ یہ کم سے کم انڈور پروگرام ہوں گے۔ امکان ہے کہ وہ کولکاتا میں پریس کانفرنس سے خطاب کر سکتے ہیں۔ذرائع نے بتایا کہ اس دورے کے دوران ، امیت شاہ ، پارٹی کے سینئر رہنماو¿ں جیسے کیلاش وجئے ورگیہ، نائب صدر مکل رائے اور پارٹی کے ریاستی صدر دلیپ گھوش کے ساتھ بوتھ اور ضلعی سطح کے رہنماو¿ں سے بات چیت کریں گے۔واضح رہے کہ امیت شاہ نے کورونا وبا کے دوران مغربی بنگال کے لئے ڈیجیٹل ریلی سے خطاب کیاتھا۔ کورونا وائرس کے انفیکشن کی وجہ سے لاک ڈاو¿ن کے بعد ریاست کا یہ ان کا پہلا دورہ ہوگا۔ امیت شاہ اس سے قبل یکم مارچ کو مغربی بنگال تشریف لائے تھے۔قابل غور بات یہ ہے کہ مغربی بنگال کے گورنر ، جگدیپ دھنکر ریاست میں ‘بگڑتے امن و امان’ کےلئے ریاستی حکومت پر مستقل تنقید کرتے رہے ہیں۔ دھنکھر نے ایک دن پہلے ہی نئی دہلی میں امیت شاہ سے ملاقات کی تھی اور ان سے ریاستی حالات کے بارے میں تبادلہ خیال کیا تھا۔ مغربی بنگال کے بی جے پی قائدین بھی ریاست میں امن و امان کے بگڑتے حالات کا حوالہ دیتے ہوئے صدارتی حکمرانی نافذ کرنے کا مطالبہ کررہے ہیں۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments are closed.