Take a fresh look at your lifestyle.

بنگلہ دیشی ہندو رفیوجیوں کو جنوری سے شہریت دی جائے گی

کولکاتا،7دسمبر: اتوار کو امبیڈ کر کے یوم پیدائش کے موقع پر ریڈ روڈ کے ایک سیاسی جلسے میں بھاجپا کے معتمد لیڈر کیلاش وجئے ورگیہ نے ممتا بنرجی اور ترنمول حکومت پر سامنے سے وار کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت امبیڈ کر کے دستور پس و پشت ہے اور بنگال میں بھتیجے کا دستور چل رہا ہے۔ پھوپھی جان کر معمولی ہوائی چپل پہن رہی ہیں تو بھتیجہ 25لاکھ کا چشمہ اور 75ہزار کا جوتا پہن کر عوام کو بیو قوف بنا رہا ہے۔ اس کے بعد انہوں نے ممتا بنرجی کے خلاف یہ الزام عائد کیا کہ وہ کسان بل کے خلاف اڑی ہوئی ہیں۔ شرنارتھیوں کو پناہ دینے میں بے رخی کا رویہ اپنائے ہوئے ہیں تو دوسری طرف سے دراندازوں کو گھسنے پر خموشی اختیار کئے ہوئے ہیں۔ کیلاش ورگیہ نے باراسات کے مندر میں پوجا کرنے کے بعد یہ ا قرار کیا کہ ان کی پارٹی متوا برادری کو شہریت دینے پر اٹل ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ جنوری سے بنگلہ شی شر نارتھیوں کو شہریت دینے کا کام شروع ہوگا۔ اس وقت ترنمول کانگریس 30 فیصد شرنارتھیوں کو لے کر فکر مند ہیں جبکہ 70فیصد شر نارتھیوں کی باز آباد کاری کے لئے بھاجپا پورے پور تیار ہے۔ اقتدار پر آجانے کے بعد بنگال میں روزگار کی بھرمار ہوگی۔ سیاسی نفرت کو دور کیا جائے گا اور ایک سنہرے بنگال کو وجود میں لایا جائے گا۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments are closed.