Take a fresh look at your lifestyle.

بنگال اسمبلی انتخاب کو لیکرحکمت عملی کےلئے ریاستی بھگوا ٹیم دہلی روانہ

0

کولکاتا،22جولائی:ریاستی بی جے پی کے اعلیٰ قائدین بنگال میں اگلے سال ہونے والے اسمبلی انتخابات کی تیاریوں اور حکمت عملی پر ذہن سازی کےلئے دہلی کےلئے روانہ ہوگئے ہیں۔ پارٹی ذرائع کے مطابق بدھ کے روز وزیر داخلہ امیت شاہ اور بی جے پی صدر جے پی نڈا کے ساتھ ایک میٹنگ ہوگی۔دہلی جانے والے قائدین میں ریاستی بی جے پی صدر اور ممبر پارلیمنٹ دلیپ گھوش ، قومی سکریٹری راہول سنہا ، قومی ایگزیکٹو ممبر مکل رائے اور دیگر شامل ہیں۔ قومی جنرل سکریٹری اور بنگال کے انچارج کیلاش وجئے ورگیہ بھی اس میٹنگ میں شریک ہوں گے۔ دراصل بنگال میں اگلے سال اپریل سے مئی میں اسمبلی انتخابات ہونے والے ہیں۔ بی جے پی پہلے ہی بنگال کے قلعے کو فتح کرنے کی تیاری کر رہی ہے۔حال ہی میں ، کرونا بحران کے بی جے پی کے اعلی رہنماو¿ں اور متعدد مرکزی وزراءنے بھی کئی دنوں تک بنگال میں ایک ورچوئل ریلی سے خطاب کیا۔ ان میں وزیر داخلہ امیت شاہ ، وزیر خزانہ نرملا سیتارامن سے بی جے پی کے قومی صدر جے پی نڈا بھی شامل ہیں جنھوں نے یہاں ایک ورچول ریلی نکالی۔اس بار بنگال میں مرکزی مقابلہ حکمراں ترنمول کانگریس اور بی جے پی کے مابین ہے۔ اس سے قبل 2019 کے لوک سبھا انتخابات میں بی جے پی نے بنگال کی 42 میں سے 18 نشستوں پر کامیابی حاصل کرکے ترنمول کانگریس کو سخت مقابلہ دیا تھا۔ اس کے بعد سے بی جے پی رہنماو¿ں اور کارکنوں کے حوصلے میں نمایاں اضافہ ہوا ہے اور وہ اگلے اسمبلی انتخابات میں کامیابی کے لئے پراعتماد ہیں۔ یہاں ترنمول کانگریس بھی اقتدار میں واپسی کی تیاری کر رہی ہے۔وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے ایک روز قبل منگل کو پارٹی کے یوم شہدائے جلسے میں کہا تھا کہ 2021 میں بنگال سے بی جے پی کا خاتمہ ہوگا۔ انہوں نے پارٹی کارکنوں سے یہ عہد لینے کا مطالبہ کیا کہ بی جے پی کے تمام امیدواروں کو ان کی ضمانت ضبط کرنی چاہئے۔ ممتا نے یہ بھی الزام لگایا تھا کہ مرکز نے بنگال کو مسلسل نظرانداز کیا ہے ، لہذا یہاں کے لوگوں نے 2021 میں اس کا بدلہ لینگے۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Leave A Reply

Your email address will not be published.