Take a fresh look at your lifestyle.

بی جے پی کورونا کی آڑ میں لاک ڈاؤن کا فائدہ اٹھاکر ریل کو فروخت کررہی ہے : اسیت مجمدار

ہگلی7/جولائی ( محمد شبیب عالم ) مرکزی حکومت کی جانب سے ریلوے کو غیرسرکاری کرنے کے خلاف میں آج پورے ریاست کے ساتھ ضلع ہگلی کے مختلف ریلوے اسٹیشنوں  گلی محلہ اور چوراہے پر ترنمول کانگریس کا احتجاجی مظاہرہ ہوا ۔   ریاستی وزیر اعلیٰ ممتابنرجی پہلے ہی ہدایت کرچکی ہیں کہ آئندہ 21جولائی شہید دیوس کے مدنظر ریاست کے تمام بوتھ سطح پر آئندہ دس جولائی تک مرکزی حکومت کی بدعنوانی کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کرنا ہے ۔    آج انکی ہدایت کے مطابق مظاہرے کا دوسرا دن رہا ۔  ہگلی ضلع کے تمام اسمبلی کے ایم ایل اے لیڈران مقامی رہنماء اور کارکنوں نے آج ریل کو غیرسرکاری کیئے جانے کے خلاف میں مظاہرہ کیا گیا ۔  چنسورہ کے ایم ایل اے اسیت مجمدار صبح سے ہی ہگلی ریلوے اسٹیشن ، ہگلی گھاٹ ریلوے اسٹیشن ، بنڈیل اور چنسورہ اسٹیشن کے پاس مودی حکومت کے خلاف اپنے ہزاروں حامیوں کے ساتھ مظاہرہ کرتے دیکھا گیا ۔ اس دوران اسیت مجمدار نے کہا کہ ملک میں لاک ڈاؤن کی آڑ میں بی جے پی ریلوے کو فروخت کررہی ہے ۔ یہاں تک کہ کوآپریٹو بینک تک کو غیرسرکاری کردینے کی پلاننگ کرچکی ہے ۔ اتنا ہی نہیں ایسے اور بھی شعبے ہیں اس میں کول انڈیا بھی شامل ہیں جسے غیرسرکاری ہاتھوں میں سونپ دینا چاہتی ہے ۔ اگر اسے یہیں نہیں روکا گیا تو وہ دن دور نہیں کہ ملک بھی فروخت کردے ۔ اسیت مجمدار نے مودی کے خلاف بولتے ہوئے کہا کہ کھائے کا اسی ملک کا پہنے گا اسی ملک کا اور آخر میں اسی ملک کو فروخت بھی کرنے کی سازش کرنے چلا ہے ۔ ایسی حکومت اور وزیراعظم کی ہمیں ضرورت نہیں اسکی ہاتھوں سے اس ملک کو آزاد کرانا ہوگا ۔ ترنمول پارٹی ظلم کو برداشت نہیں کرے گی ۔ مودی حکومت کے خلاف پرزور مخالفت کرتی رہے گی ۔       ٹھیک اسی طرح کی مخالفت رشڑا اسٹیشن پر بھی دیکھا گیا ۔ جہاں ہگلی ضلع ترنمول کانگریس کے صدر دلیپ یادو ، رشڑا میونسپلٹی کے سابق چئیرمین وجئے ساگر مشرا کے رہنمائی میں تمام سابق کونسلر اور ترنمول کارکنان بھی ریلوے کو پرائیویٹ کرنے کے خلاف میں نعرے لگاتے دیکھائی دیئے ۔     دلیپ یادو آج پورے ہگلی ضلع میں گھوم گھوم کر مقامی ترنمول لیڈران و کارکنان کے اس احتجاجی تقریب میں شامل ہوئے ۔   ڈانکونی ، آدی سپتو گرام ، دھنیاکھالی ، بھدریشور ، پنڈوا ، بانسبیڑیا تمام اسٹیشنوں پر احتجاجی مظاہرے میں شامل ہوئے اور آخر میں بانسبیڑیا اسلام پاڑہ حالٹ اسٹیشن کے پاس ریل گیٹ پر بی جے پی اور مودی کی مخالفت میں احتجاجی جلسہ کو خطاب کیا ۔  یہاں دلیپ یادو نے مرکزی حکومت کی پول کھولتے ہوئے لوگوں کو بتایا کہ  لاک ڈاؤن کے دوران مرکزی حکومت اعلان کی تھی کہ مہاجر مزدوروں پچیس ہزار سے زائد کی تعداد میں جس ریاست میں جائیں گے ۔ اس ریاست کو غریب کلیان اسکیم کے فہرست میں شامل کیا جائے گا ۔  لیکن ابھی تک مغربی بنگال میں کل 93 ہزار مہاجر مزدوروں کی آمد ہوئی ہے ۔ اسکے باوجود بھی مغربی بنگال کو غریب کلیان اسکیم سے محروم رکھا گیا ہے ۔  انہوں نے اور کہا کہ مودی صرف لوگوں کو باٹنے کی سیاست کرتے ہیں ۔  آج پورا ملک کورونا اور لاک ڈاؤن کی مارجھیل رہا ہے ۔ لوگوں کی حالت بد سے بدتر ہوگئی ہے ۔  ایسے میں لوگوں کو راحت پہونچانے کے بجائے ملک کے عوام پر مہنگائی کی بوجھ بڑھانے ساتھ ہی لاک ڈاؤن کی آڑ میں ملک کے 130 کروڑ لوگوں کو گمراہ کرتے ہوئے ریلوے ، کول انڈیا ، کو آپریٹو اور ایسے کئی شعبے کو غیرسرکاری ہاتھوں میں فروخت کرنے جارہی ہے ۔ انہوں نے اور کہا کہ ان تمام شعبوں کو سینٹرلائز کرنے کے لئے آنجہانی اندرا گاندھی کو کتنی مشقتیں کرنی پڑی تھی ۔  اسلام پاڑہ حالٹ کے پاس اس احتجاجی مظاہرے میں بانسبیڑیا میونسپلٹی کے سابق ایم آئی سی امیت گھوش ، سابق نائب چئیرمین اور کئی ترنمول کارکن شامل رہے ۔       ریل کو غیرسرکاری کرنے کے خلاف میں آج پورے ہگلی کے مختلف اسٹیشنوں پر ترنمول کا مظاہرہ

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments are closed.