Take a fresh look at your lifestyle.

ہوڑہ: بند ریلوے بکنگ کاونٹر سے کمپیوٹر کی چوری 2 گرفتار

ہوڑہ: 17 ستمبر: اولڈ کمپلیکس ہوڑہ اسٹیشن کے سب وے پر جنرل ریلوے ٹکٹ بکنگ آفس میں داخل ہونے کے بعد چوروں نے کمپیوٹر مانیٹر ، سی پی یو اور کی بورڈ صاف کردیئے ، جو کرونا وبا کی وجہ سے 23 مارچ سے بند تھا۔واقعہ کی اطلاع ملتے ہی ریلوے انتظامیہ میں ہلچل مچ گئی۔ آر پی ایف نے دو افراد کو گرفتار کیا ہے اور ان سے 6 چوری شدہ مانیٹر ، ایک سی پی یو اور 2 کی بورڈ برآمد ہوئے ہیں۔ تاہم اس واقعے سے متعلق ریلوے اور ضلع پولس کے سیکورٹی انتظامات کے بارے میں سوالات اٹھائے گئے ہیں۔ ذرائع کے مطابق منگل کے روز آر پی ایف اور ریلوے کمرشل ڈیپارٹمنٹ کے افسران اس وقت حیران رہ گئے جب وہ طویل بند سب وے کے اندر واقع ٹکٹ بکنگ آفس کا معائنہ کرنے آئے تھے۔ 22 نمبر کا ٹکٹ کاو¿نٹر سیسہ ٹوٹا ہوا پایا گیا تھا اور 6 مانیٹر ، ایک سی پی یو اور 2 کی بورڈ اندر سے غائب تھے۔ چوری کی اطلاع سے ریلوے کے اعلیٰ حکام میں خوف و ہراس پھیل گیا۔ اس کے بعد بکنگ آفس کے باہر سی سی ٹی وی فوٹیج کی جانچ پڑتال کی گئی اور وہاں ایک نوجوان آتے جاتے دیکھا گیا۔ اس کے بعد ہوڑہ نارتھ پوسٹ کے آر پی ایف نے ریلوے ایکٹ کے ترمیم شدہ قانون کے تحت مقدمہ درج کرکے تفتیش شروع کردی۔ دریں اثنا مخبر کی اطلاع پر آر پی ایف سب انسپکٹر کوشل کمار کی ٹیم نے ہوڑہ بریج سے دیویش کمار مالی عرف شنکر (19) نامی نوجوان کو گرفتار کیا اور اس سے ایک مانیٹر اور 2 کی بورڈ برآمد کرلئے۔ ملزم سے باز پرس کرتے ہوئے اس نے اس شخص کا نام ظاہر کیا جس نے چوری شدہ سامان خریدا تھا۔ انہوں نے بتایا کہ 10 ، 11 اور 12 ستمبر کے دن اس نے ڈکیتی کی تھی۔ وہ سب وے کے اندر داخل ہوا اور اسی طرح چوری شدہ سامان لے کر واپس آیا۔چونکہ ہوڑہ اسٹیشن آنے والے سب وے کے تمام گیٹ ایک عرصے سے بند ہیں ، اس لئے کسی کو دیکھنے کا خوف نہیں تھا۔ اس کے بعد آر پی ایف کی ٹیم نے ضلعی پولس کے ساتھ مل کر گولا باڑی تھانہ کے ماتحت علاقہ پیلخانہ علاقے کے نندا گھوش روڈ 54 پر واقع مکان کی تلاشی لی اور چھاپہ مارا اور موقع سے 5 مانیٹر اور ایک سی پی یو بھی برآمد کیا۔آر پی ایف نے محمد عامر خان نامی شخص کو چوری شدہ سامان خریدنے کے الزام میں بھی گرفتار کیا۔ آر پی ایف کے مطابق کویڈ کی وبا کی وجہ سے سب وے کے تمام دروازے کئی مہینوں سے بند ہیں جن کی چابی کے ایم ڈی اے کے پاس ہے۔ سیکورٹی کی ذمہ داری بھی ضلعی پولیس پر عائد ہوتی ہے۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments are closed.