Take a fresh look at your lifestyle.

کرونا کی وجہ سے کلکتہ ہا ئیکورٹ بند

0

کولکاتا۔30اپریل:کرونا کی وجہ سے 15 مئی تک کے لئے کلکتہ ہا ئیکورٹ بند کر دیا گیا ہے۔ اس درمیان عدالت میں اہم معاملات کی سماعت آن لائن ہوگی۔ 3مئی کے بعد ملک بھر میں لاک ڈاﺅن میں توسیع ہو گی یا نہیں اس معاملے میں یقینی طور پر کچھ کہا نہیں جا سکتا لیکن ہائیکورٹ کا بند رہنا یقینی ہے۔ کلکتہ ہائیکورٹ کے چیف جسٹس تھوٹراتھیل بھاسکرن نائر رادھا کرشنن کی ہدایت پر کلکتہ ہائی کورٹ کے رجسٹرار جنرل راءچٹوہادھیائے نے ایک سرکولر جاری کر کے 15مئی تک ہائیکورٹ بند کئے جانے کی اطلاع دی ہے۔ لیکن آئندہ 28اور30اپریل اور مئی مہینے کے 4,7,12,اور15مئی کو عدالت کا آن لائن ریعہ دو کر کے ڈویژن بنچ اور 3 کرکے سنگل بنچ میں اہم معاملات کی سماعت ہو گی۔ واضح رہے کہ لاک ڈاﺅن کے درمیان بھی ویڈیو کانفرنس کے ذریعہ کام ہو رہا تھا۔ منگل کو ہائیکورٹ میں اسپیشل عدالت ہونے کی وجہ سے قریب 300لوگوں کی بھیڑ اکٹھا ہوگئی۔ اس کے بعد حالات کی سنگینی کو دیکھتے ہوئے کلکتہ ہائیکورٹ بند کر دیا گیا۔ دوسری طرف خبر ملی ہے کہ علی پو رعدالت میں جس گاڑی کے ذریعہ افسران کو لایا اور ے جایا جارہا تھا۔اس گاڑی کی ڈرائیور کی ماں کرونا سے متاثر ہے۔اس بات کی جانکاری ملتے ہی 29تاریخ کو علی پور عدالت بند کرنے کا اعلان کیا گیا۔ اس گاڑی کے ذریعہ جن لوگوں کی آمدو رفت ہو رہی تھی انہیں کورینٹائن میں جانے کی صلاح دی گئی ہے۔ اس واقعے سے کلکتہ ہائیکورٹ میں بھی دہشت پھیل گئی ہے۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Leave A Reply

Your email address will not be published.