Take a fresh look at your lifestyle.

مزید ایک ڈاکٹر کرونا وائرس کا شکار

کولکاتا،21،ستمبر:کرونا وائرس سے متاثر ہونے کے بعد کولکاتا میں ایک اور ڈاکٹر کی موت ہوگئی۔موصولہ اطلاع کے مطابق ودیاساگر اسٹیٹ جنرل اسپتال کے آرتھوپیڈک سرجن سرجیت نندی کی کرونا کی وجہ سے موت ہوگئی۔ کرونا وائرس کی زدمیں آرتھوپیڈک سرجن سرجیت نندی کو پچھلے کئی دنوں سے علی پور کے نجی اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔ جہاں علاج کے دوران ان کی موت ہوگئی۔ان کی عمر 55 سال تھی۔وہ ہری دیو پور میں رہا کرتے تھے ۔ اس سے قبل بھی اسی کرونا وائرس کی لپیٹ میں دو ڈاکٹر ہلاک ہوگئے تھے۔ دونوں ڈاکٹر کرونا کے خلاف جنگ لڑ رہے تھے۔ اسی دوران وہ دونوں کرونا سے متاثر ہوکر شدید بیمار ہوگئے۔ ان میں سے ایک پربل گائنا تھے ، جو جنوبی 24 پرگنہ ضلع میں پھالٹا بلاک پرائمری ہیلتھ سنٹر میں اے ایم او تھے۔ کرونا کی زد میں آنے کے بعد انہیں کلکتہ میڈیکل کالج اینڈ اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔ جبکہ ایک اور ڈاکٹر اپورب ساہا تھے۔ وہ ایس ایس کے ایم اسپتال کے سی ٹی وی ایس ڈیپارٹمنٹ کے سابقہ آر ایم او تھے۔اس سے پہلے بھی بہت سے ڈاکٹروں کو جو کرونا وائرس کا شکار ہوچکے ہیں ان کی موت ہوچکی ہے۔اس میں ڈاکٹر سنجے سین بھی شامل تھے۔65 سالہ ڈاکٹر سنجے سین کو میڈیکا اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔ امراض امراض کے ماہر ڈاکٹر سین سالٹ لیک امری اسپتال سے وابستہ تھے۔وہ علی پور کے ایک نجی اسپتال سے بھی وابستہ تھے۔ اس کے علاوہ ریاست میں ایک ہی دن میں کرونا کی وجہ سے تین ڈاکٹروں کی موت ہوگئی۔جس میں کوٹھاری اسپتال کے تاپس سنگھ ، بیرک پور کے ماہر چشم ڈاکٹر وشوجیت منڈل اور شیام نگر کے پردیپ بھٹاچاریہ شامل تھے۔ڈاکٹر پردیپ کا تعلق کسی اسپتال سے نہیں تھا وہ مریضوں کو ذاتی طور پر دیکھتے تھے۔ کرونا ٹیسٹ رپورٹ مثبت آنے کے بعد انہیں میڈیکا اسپتال میں داخل کرایا گیا جہاں انہوں نے آخری سانس لی۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments are closed.