Take a fresh look at your lifestyle.

بی جے پی کی بنگال تقسیم کی گھناونی سازش کو ترنمول کانگریس ناکام بنائے گی: گوتم دیب

0

کولکاتا،5اکتوبر: ترنمول نے پورے اعتماد سے کہا کہ مرکزی حکومت کی جو سازش ہے کہ وہ اپنے ناپاک ارادوں کی تکمیل کے لئے گورکھا لینڈ کو ایک الگ ریاست میں منتقل کر کے دم لے گا۔ مرکز کے اس گھناو¿نے سازش کے خلاف ترنمول کے لیڈر گوتم دیب نے سبھوں کو ہوشیار کیا اور حرکت میں رہنے کا مشورہ بھی دیا۔ گورکھا لینڈ کے ایشو کو لے کر آئندہ 7اکتوبر کو نئی دہلی میں ایک سہ رکنی بیٹھک ہونے والی ہے۔ اس کی خبر لگتے ہی ترنمول کے رہنما گوتم دیب نے ایک پریس کانفرنس میں صحافیوں کو یہ آگاہی دی کہ بی جے پی بنگال کو تقسیم کرنے کی سازش میں جٹی ہوئی ہے۔ مگر ہم لوگ متحد ہیں ان کے یہ ناپاک منصوبے کو کبھی بھی شرمندہ تعبیر نہ ہونے دیں گے۔ ان کے بعد جی ٹی کے چیئرمین انیت تھاپا نے بھی صحافیوں کو یہ بتایا کہ دارجلنگ میں جب کوئی انتخابی مہم زور پکڑتا ہے تو ہم لوگ مرکز کی طرف دیکھتے ہیں۔ مگر اس بار بھی بی جے پی کا ارادہ فاسد و باطل ہوجائے گا۔ اب با وثوق ذرائع کے بعد یہ عقدہ کھلا ہے کہ مرکزی حکومت سے ریاستی داخلہ امور کے سکریٹری جی ٹی کے سکریٹری دارجلنگ کے ضلع ناظم و گورکھا جن مکتی مورچہ کے صدر کو تحریری خط بھی بھیجے گئے ہیں۔ اس میں یہ درج ہے کہ آئندہ 7اکتوبربروزبدھ کو صبح11بجے نئی دہلی کے ایک میٹنگ میں گورکھا لینڈ کے ایشو پر سہ رکنی گفت و شنید ہوگی۔ اب دیکھنا یہی ہے کہ اس میٹنگ میں بمل گرونگ پنتھی گورکھا جن مکتی مورچہ و جی این ایل ایف حاضر ہوں گے یا نہیں۔ وجہ یہی ہے کہ پہلے بھی مرکز نے جی ٹی کو لے کر ایک سہ رکنی بیٹھک کا اہتمام کیا تھا مگر آخر میں وہ ناکام رہ گیا۔ یاد رہے کہ حال ہی میں مرکزی حکومت نے جموں و کشمیر کو دو حصوں میں الگ کر چکا ہے۔ یہی عمل اب وہ گورکھا لینڈ میں بھی دہرانے کا ارادہ رکھا ہے۔ ایسا ہی دارجلنگ کے ایم پی راجیو بستا نے بیان دیا ہے۔ اس نے یہ بھی کہا ہے کہ گورکھا لینڈ کا وجود نہ ہونے پر ایک الگ سے علاقہ بنایا جائے جس میں مرکزی حکومت کے توسط سے انتظامیہ کام کرے۔ اب7اکتوبر کو جو بیٹھک بلائی گئی ہے اس میں گورکھا لینڈ کی تشکیل سازی کے سوالات تو ضرور اٹھائیںگے۔
یاد رہے کہ گورکھا جن مکتی مورچہ کے نیتا بمل گورنگ کا یہ پرانا منصوبہ ہے۔ گورکھا لینڈ کی حریت کا گرونگ کی قیادت والی مورچہ کا یہ مانگ ہے کہ دارجلنگ کے آس پاس کے حلقوں کو مستقل سیاسی حل کے ذریعہ جو کہا گیا ہے پہلے بی جے پی اپنا وہ وعدہ پورا کرے۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Leave A Reply

Your email address will not be published.