Take a fresh look at your lifestyle.

ممتا کا راج بھون کے خلاف غیر ذمہ دارانہ سلوک گورنر دھنکھرکا خط کے ذریعے سوالات

0

کولکاتا ،14،مئی:مغربی بنگال کے گورنر جگدیپ دھنکھر نے ایڈمنسٹریٹر کی تقرری کے بارے میں کولکاتا میونسپل کارپوریشن (کے ایم سی) کی طرف سے طلب کردہ وضاحت کا جواب نہ دینے پر وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی پرشدید تنقید کیا ہے۔ جمعرات کو وزیر اعلیٰ کو لکھے گئے خط میں گورنر نے راج بھون کے بارے میں ان کے غیر ذمہ دارانہ سلوک پر سوال اٹھایا۔ دھنکھر نے اپنے خط میں لکھا ہے کہ انہوں نے 6 مئی کو ریاست کے چیف سکریٹری کو خط لکھا تھا اور اس سلسلے میں کچھ معلومات طلب کی تھیں ، لیکن کوئی جواب نہیں ملا۔ اگلے دن انہوں نے وزیر اعلیٰ سے آئین کی دفعہ 167 کے تحت معلومات دینے کی درخواست کی ، لیکن اس کا کوئی جواب نہیں ملا۔ گورنر نے وزیر اعلیٰ کو مخاطب کرتے ہوئے لکھا ہے کہ آپ کی مستقل خاموشی بدقسمتی اور آئین کی بنیادی روح کے خلاف ہے۔خط میں گورنر نے کہا ہے کہ ان کے لئے 6 مئی کو جاری کردہ کے ایم سی کی رہائی سے متعلق حقائق جاننا ضروری ہے کیونکہ اپوزیشن جماعتوں نے مذکورہ بحالی پر سخت اعتراض اٹھایا ہے۔ ایسی صورتحال میں انہیں کسی فیصلے تک پہنچنے کے لئے حقائق جاننے کی ضرورت ہوتی ہے۔ گورنر نے لکھا ہے کہ جس طرح آپ وزیر اعلیٰ کی حیثیت سے اپنی ذمہ داریوں کو پورا کرنے کےلئے آئین پر عمل پیرا ہونے کے پابند ہیں ۔ اسی طرح بطور گورنر آئین کی حفاظت کرنا بھی میری ذمہ داری ہے۔ خط میں گورنر نے تفصیل سے بتایا ہے کہ ان کی طرف سے مذکورہ بالا معلومات طلب کرنا آئین کے مطابق ہے۔ وزیر اعلیٰ کو ان کی آئینی ذمہ داریوں کی یاد دلاتے ہوئے گورنر نے لکھا ہے کہ اس مضمون میں آپ کی خاموشی بدقسمتی اور آئین کی بنیادی روح کے منافی ہے۔ تاہم گورنر نے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ اب وزیر اعلیٰ آئین کے مطابق فوری اقدامات کریں گےں۔ قابل ذکر ہے کہ ریاستیحکومت نے حال ہی میں شہری ترقی اور بلدیات امور کے وزیر اور کولکاتا کارپوریشن کے سبکدوش ہونے والے میئر فرہاد حکیم کو کے ایم سی کا منتظم مقرر کیا ہے۔ حکومت کے فیصلے کی مخالفت کرتے ہوئے اپوزیشن جماعتوں نے گورنر دھنکر کو ایک تحریری شکایت لکھی ہے۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Leave A Reply

Your email address will not be published.