Take a fresh look at your lifestyle.

امسال محرم کا جلوس نہیں،ہگلی امام باڑہ کمیٹی بھی متفق پولیس انتظامیہ کے ساتھ محرم کمیٹیوں کا مشترکہ فیصلہ

ہگلی17/اگست ( عوامی نیوز بیورو ) کورونا وبا کے سببامسال کی تمام سرگرمیوں اورتہواروں کو قید کر دیا ہے۔ جسکی وجہ سے لوگ کچھ بھی کھل کر نہیں کرپا رہے ہیں۔ ادھر اس وباکی وجہ سے حکومت بھی انفیکشن پھیل جانے کے ڈر سے سختی دیکھا رہی ہے تاکہ لوگوں کو محفوظ رکھا جاسکے۔آج چنسورہ – ہگلی میونسپلٹی میں محرم کے مدنظر چنسورہ پولیس انتظامیہ کے جانب سے علاقے کے تمام محرم کمیٹیوں کو لیکر ایک اہم میٹنگ بلائی گئی تھی۔ اس میٹنگ میں چنسورہ تھانہ کے آئی سی پردیپ داں ، چنسورہ تھانہ کے ایس آئی تاپس کمار گھوش ساتھ ہی چنسورہ کے ایم ایل اے اسیت مجمدار ، ریاستی وزیر زراعت مملکت تپن داس گپتا ، چنسورہ میونسپلٹی کے بورڈ آف ایڈمنسٹریٹ کے چیئر پرشن گوری کانتو مکھرجی ، ہگلی ضلع ترنمول اقلیتی سیل کے نائب صدر مرزا سنور علی ، ہگلی امام باڑہ کے جانب سے پرنسپل ڈاکٹر سید محسن رضا عابدی ، امام علی ، مرزا ساجد علی اور محرم کمیٹیوں کے صدر سیکریٹری و ممبران۔ میٹنگ کی کاروائی شروع ہوتے ہی ملک میں کورونا وباکو لیکر چرچہ ہوا اور اسی وباکا حوالہ دیتے ہوئے پولیس اور میونسپلٹی اس لیڈران کے جانب سے حکومت کے فیصلے کو سامنے پیش کرتے ہوئے کہا گیا کہ ابھی کسی بھی طرح کے جلسہ جلوس پر پابندی اس لئے لگائی جارہی ہے کہ کورونا کا انفیکشن اور نہ پھیل جائے۔ اسی لئے تمام محرم اکھاڑہ اور تازیہ کمیٹی کے صدر سیکریٹری ممبران سے گزارش کی جاتی ہے کہ اس سال محرم کے جلوس سے پرہیز کریں۔ برائے مہربانی محرم کا جلوس اکھاڑہ نہ نکالیں۔ اس میٹنگ میں شامل محرم کمیٹیوں کے لوگوں نے انتظامیہ کی جانب سے باتیں سننے کے بعد باری باری سے اپنی اپنی باتیں پیش کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں حکومت کے فیصلے منظور ہیں۔ اس دوران امام باڑہ کے جانب سے پرنسپل ڈاکٹر سید محسن رضائ عابدی نے اپنی مختصر سی بات رکھنے کے دوران امام حسن امام حسین کی سادگی انکی کارکردگی کو بھی بیان کیا اور کہا کہ حکومت جو بھی فیصلہ لی ہے وہ ہم سب کی بھلائی کے لئے لی ہے۔ ہم اس سال نہ محرم کا جلوس نکالیں گے نہ راستے پر ماتم کریں گے۔ لیکن انتظامیہ سے گزارش کیا گیا کہ امام باڑہ کے اندر جو ہماری رسمیں ہیں وہ معاشرتی فاصلے کا احترام کرتے ہوئے ہم کریں گے۔ ساتھ ہی ایک اور گزارش کی گئی کہ دسویں محرم کے دن پھول و جھنڈوں کو ٹھنڈا کرنے کے لئے ہم کربلا جائیں گے۔ اس دن چار سے پانچ لوگوں کو جانے کی اجازت دی جائے۔ اس پر پولیس انتظامیہ کے جانب سے کہا گیا کہ پولیس آپکے ساتھ رہے گی۔ پولیس کے جانب سے یہ بھی کہا گیا کہ کہاں کتنے لوگ رہیں گے۔ کیسے جائیں گے۔ اسکی ایک فہرست نام موبائل نمبر کے ساتھ آئندہ 25 اگست تک ہمیں دے دیں تاکہ پولیس اپنے طور پر ڈیوٹی انجام دے سکے۔ اس دوران چنسورہ کے ایم ایل اے اسیت مجمدار نے محرم کمیٹیوں کی تعریفیں کرتے ہوئے کہا کہ مجھے معلوم ہے کہ کتنی سادگی سے یہاں لوگ تہوار مناتے ہیں۔ یہاں برسوں سے کبھی بھی کوئی ناخوشگوار واقعات سننے کو نہیں ملا ہے۔ لوگ امن کے ساتھ اس تہوار کو مناتے آئے ہیں اور آئندہ بھی اسی طرح سے تہوار مناتے رہیں گے۔ اس سال جو دشواریاں ہورہی ہے یقیناً دکھ کی بات ہے ۔ مگر کیا کیا جائے ہمارے بس میں تو ہے نہیں ہمیں پرارتھنا دعائ کرنی ہے کہ اس وبائ سے دنیا کے تمام لوگوں کو جلدی سے نجات ملے تاکہ آئندہ ہم تمام ذات دھرم مذاہب کے لوگ اپنا اپنا تہوار جوش و خروش سے مناسکیں۔ آخر میں امام باڑہ کے سابق منیجر افتخار عالم نےکہا کہ محرم کی دسویں تاریخ کو زنجیری ماتم کے نہیں کرکے اس دن خون عطیہ کیمپ لگانے کا احتمام کیا جائے گا۔ انہوں نے انتظامیہ سے اسکے لئے مدد کی گزارش کرتے ہوئے کہا کہ اس دن موبائل بلڈ کیمپ ( خون عطیہ ) لگانے میں ہمارا ساتھ دیں۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments are closed.