Take a fresh look at your lifestyle.

قدرتی آفات بارش و سیلاب نے 100کروڑ کی فصلیں تباہ کردی مقروض کسانوں کی راتوں کی نیند یں اڑ گئیں

مالدہ۔ 10اکتوبر : لگاتار بارش اور سیلابی کیفیت کی وجہ سے فصل کی تباہی بھی خوب ہوگی۔ اب تک مالدہ میں سیلاب و بارش کی وجہ سے 100کروڑ کی فصلیں تباہ ہو چکی ہیں اور 22ہزار ہیکٹر زمین کی فیصل پانی کے نیچے ہے ۔ حالانکہ غیر سرکاری طور پر نقصان کا تخمینہ اور بھی زیادہ ہے ۔ جس کی وجہ سے مالدہ کے کسانوں کی حالت قابل رحم ہے ۔مالدہ ضلع پریشد نے نقصان کی تلافی کی بھی امید دکھائی ہے۔
ایک طرف کرونا کا عذاب تو دوسری طرف قدرت کی ستم ظریفی جس کے بیچ میں آکر کسانوں کی زندگی تباہ ہورہی ہے اس کرونا کے عتاب سے اس بار آم و ریشم کی فصل بھی برباد ہوا ہے ۔ زیادہ تر کسان مہاجنوں سے سود پر روپئے لئے ہیں اور اب سر پر ہاتھ دھرے بیٹھے ہیں کہ کیسے ان کے سود کو وہ ادا کر پائیں گے ۔
اس قدرتی آفات سے مالدہ کے 15عدد بلاک کے 22ہزار ہیکٹر کی زرخیز زمین کی فصلیں تباہ ہوئی ہیں۔ 100کروڑ سے زیادہ نقصان کا اندازہ لگایا گیا ہے حالانکہ نقصان کی مقدار اور بھی زیادہ ہوسکتا ہے ۔
مگر اس قدرتی آفا ت سیلاب و بارش سے زیادہ متاثر مالدہ کے چانچول 1اور 2مانک چک ، رتوا ۔2، گاجول ، بامن گولا، پرانامالدہ وانگر یز بازار بلاک ہوئے ہیں دھان، مکئی ک علاوہ سیلاب نے سبزیاں پر بھی آفت ڈھائی ہے ۔ یہاں کے کسان سود پر روپئے لے کر کاشت کرتے ہیں اب ان مقروض کسانوں کی راتوں کی نیندیں اچا ٹ ہوگئی ہیں۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments are closed.