Take a fresh look at your lifestyle.

کولکاتا میڈیکل کالج میں 38ڈاکٹرس کورونا پوزیٹیو خبر سن کر سواستھ بھون فکر میں مبتلا

کولکاتا7اکتوبر: کولکاتا کا سرکاری بڑا اسپتال کلکتہ کالج اینڈ اسپتال کو نئے ڈاکٹروں کی ضرورت درپیش ہے کیوں کہ اسپتال کے تقریباً40 ورکنگ پروفیسر اور ڈاکٹرز کورونا میں مبتلا ہوگئے ہیں۔اسپتال کی سپرنٹنڈنٹ منجو بنرجی نے ریاستی ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ کو لکھے ایک خط میں کہا کہ کورونا کے مریضوں کی بڑھتی تعداد کو دیکھتے ہویئے اسپتال میں نئے ڈاکٹروں کی بحالی کرنا ضروری ہے کیوں کہ پہلے سے کام کرنے والے 40 کے قریب ڈاکٹرز اور پروفیسر کرونا میں مبتلا ہوگئے ہیں۔40 میں 12 پروفیسر اور ڈاکٹر دونوں ہیں۔ ان ڈاکٹروں کو کویڈ وارڈ سے جڑے ہوئے تھے۔ان بیمار ڈاکٹروں کو یا تو اسپتال میں بھرتی کیا گیا ہے یا انہیں ہوم کورنٹین کردگیا گیا ہے۔اسپتال میں حالات سے نمٹنے کے لئے 100 بیڈ بڑھانے کی کارروائی کر رہی ہے۔سواستھ بھون بھی اس خبر کو سن کر فکر میںمبتلاہوگیا۔ کلکتہ میڈیکل کالج میں کوویڈ وارڈ کے ساتھ ساتھ دیگر مریضوں کا بھی علاج ہوتا ہے ایسے میں اگرایک ساتھ 38ڈاکٹرس کورونا کے شکار ہو جائیں گے تو پھر مریضوں کاکیا ہوگا اور علاج کے لئے یہ لوگ کہاں جائیں گے۔ بہرحال ریاستی حکومت نے بھی دیگر اسپتالوں سے جونیئر ڈاکٹروں کو منگا کر میڈیکل کالج میں مریضوں کو طبی سروس فراہم کرنے کے لئے منتقل کیا ہے تاکہ مریضوں کو پریشانی نہ ہو۔ خیال رہے کہ اپریل سے ہی کلکتہ میڈیکل کالج میں کوویڈ وارڈ کس قیام کیا گیا اور مسلسل تین ماہ تک یہاں صرف کوویڈ کے مریضوں کا ہی علاج ہوتا تھا بعد میں جونیئر ڈاکٹرس کی مخالفت اور احتجاج کے بعد دیگر مرض کا علاج بھی شروع کیا گیا تاکہ دیگر امراض میں مبتلا مریضوں کو بھی علاج کی سہولت مل سکے کیونکہ اس وقت لوگوں کو ڈھونڈنے سے بھی ڈاکٹرس نہیں مل رہے تھے۔ اب پھر کلکتہ میڈیکل کالج اسی دور سے گذر رہا ہے۔ جو کہ محکمہ صحت کی لئے فکر کی بات ہے۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments are closed.