Take a fresh look at your lifestyle.

بی جے پی کے ممبران پارلیمنٹ نے ممتا پر ’دادگیری‘کا الزام لگایا

0

نئی دہلی/کولکاتا25 اپریل:مغربی بنگال سے تعلق رکھنے والے بی جے پی کے ممبران پارلیمنٹ نے وزیر اعلی ممتا بنرجی اور ٹی ایم سی پر گرینڈ اسٹینڈنگ کا الزام عائد کیا ہے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ مغربی بنگال میں انہیں نہ تو ضرورت مندوں سے ملنے کی اجازت دی جارہی ہے اور نہ ہی انہیں مدد ملنے میں رکاوٹ ہے۔ بی جے پی کے ممبران پارلیمنٹ نے الزام لگایا کہ مقامی انتظامیہ بھی دیدی کے کہنے پر عمل پیرا ہے اور سیاست بھی کررہی ہے۔ بی جے پی کے ممبران پارلیمنٹ نے کہا کہ ہم مکمل طور پر معاشرتی فاصلے پر عمل پیرا ہیں ، اس کے باوجود لاک ڈاون کو توڑنے کے لئے ہمارے خلاف جھوٹی ایف آئی آر لگائی جارہی ہیں۔مغربی بنگال سے رکن پارلیمنٹ اور مرکزی وزیر مملکت دیوشری چودھری نے کہا کہ میں 23 مارچ کو کولکاتا آیا تھا۔ 31 مارچ کو ، میں اپنے حلقے میں آیا تھا۔ وہاں لوگ لاک ڈاون کی صحیح طریقے سے پیروی نہیں کررہے تھے ، لہٰذا میں لوگوں کو بتانے نکلا اور تقسیم کرنے کیلئے ماسک بھی لیا۔ میں نے سماجی دوری کی مکمل طور پر پیروی کی ، اس کے باوجود ٹی ایم سی لوگوں نے میرے خلاف ایف آئی آر درج کروائی کہ میں لاک ڈاون کی پیروی نہیں کررہا ہوں۔انہوں نے کہا کہ تب پولیس کی سات وینوں میں 70 افراد آئے اور میرے گھر کو گھیرے میں لیااور پھر میرے اپارٹمنٹ کے باہر سنگین نوٹس لگا دیا۔ 13 تاریخ تک کورنٹائن کا نوٹس تھا ، آج بھی کورنٹائن نوٹس نہیں ہٹایا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بطور وزیر یہ میری ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ لوگوں سے ملیں اور مدد کریں ، لیکن یہاں انتظامیہ ٹی ایم سی کے کہنے پر ہمیں باہر جانے سے روک رہی ہے جو غلط ہے۔ انہوں نے کہا کہ پوری ریاست میں صرف ٹی ایم سی رہنماوں کو ہی باہر جانے کی اجازت دی جارہی ہے۔رکن پارلیمنٹ جان برلا نے بھی ایسے ہی الزامات عائد کیے تھے۔ انہوں نے کہا کہ جب میں ضرورت مندوں کو راشن پہنچانے نکلا تو پولیس نے مجھے روکا اور مجھے جانے نہیں دیا۔ میں نے اس سے کہا کہ اگر وہ صرف یہ راشن ضرورت مندوں کو ہی دیتا ہے تو اس نے بھی اس کی فراہمی نہیں کی۔ بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ سکنتا مجمدار نے کہا کہ دہلی سے اپنے حلقہ انتخاب میں آنے کے بعد ، میں خود 14 دن ہوم کوارینٹائن میں رہا۔ پھر جب میں باہر نکلا تو پولیس نے مجھے روک لیا۔ میں نے گورنر سے شکایت کی۔ مجھے چھ گھنٹے سڑک پر رکھا۔ پھر مجھے بتایا کہ مجھے 14 دن تک قرنطین میں ہی رہنا پڑے گا اور جھوٹ بولا کہ میں 8-10 افراد کے ساتھ اپنی گاڑی میں چل رہا تھا۔ جبکہ بس ڈرائیور اور میرا ساتھی میری گاڑی میں تھے۔ انہوں نے ٹی ایم سی رہنماو¿ں کی ویڈیوز دکھاتے ہوئے کہا کہ ٹی ایم سی کے لوگ 8-10 افراد کے ساتھ گھوم رہے ہیں۔بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ نے کہا کہ پولیس انتظامیہ ٹی ایم سی کے کیڈر کی طرح برتاوکررہی ہے۔ بی جے پی کے ممبر پارلیمنٹ ارجن سنگھ نے کہا کہ تین ایف آئی آر میرے نام پر کی گئیں ہیں تاکہ میں ڈر کر گھر بیٹھا جاو¿ں۔ انہوں نے کہا کہ ممتا بنرجی نہیں چاہتیں کہ ہم ضرورت مندوں تک پہنچیں۔ تاہم انہوں نے کہا کہ ہم ان سے خوفزدہ نہیں ہیں اور لوگوں کی مدد کر رہے ہیں۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Leave A Reply

Your email address will not be published.