Take a fresh look at your lifestyle.

قومی شاہراہ نہیں بننے پر آپ لو گ مرکز کیخلاف تحریک چلائیں:وزیر اعلیٰ

کولکاتا،28،دسمبر: مغربی بنگال کے مختلف علاقوں میں نیشنل ہائی ویز کا کام برسوں سے تعطل کا شکار ہے۔ اس کی وجہ سے ، لوگوں کو بہت پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ وزیراعلیٰ نے مغربی بنگال میں قومی شاہراہ کی تعمیری کام میںسست روی اور توسیع کی وجہ سے ناراضگی کا اظہار کیا ہے۔سوموار کے روز ضلع بیر بھوم کے بول پور میں انتظامی اجلاس کے دوران مقامی اراکین اسمبلی نے اس بارے میں وزیر اعلی سے شکایت کی۔ اراکین اسمبلی نے وزیر اعلیٰ کو بتایا کہ ضلع میں قومی شاہراہ 60 کی مرمت ، بحالی اور توسیع کا کام انتہائی سست رفتار سے جاری ہے۔اس پر وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے کہا کہ اس علاقے میں یہ واحد مسئلہ نہیں ہے۔ نیشنل ہائی وے 34 سمیت دیگر شاہراہوں کی تعمیر اور توسیع انتہائی سست رفتار سے جاری ہے۔ ریاستی حکومت نے کرشنا نگر اور راناگھاٹ میں شاہراہ کو توسیع دینے کےلئے بھی زمین دی ہے۔اس کے باوجود نیشنل ہائی ویز اتھارٹی نے ابھی تک تعمیراتی کام شروع نہیں کیا۔ انہوں نے کہا کہ جہاں جہاں بھی ایسا واقعہ ہوتا ہے ، آپ کو بڑے بڑے پوسٹر اور بینرز لگا کر اس کی مخالفت کرنی چاہئے۔ اگر ضرورت ہو تو ، نیشنل ہائی وے اتھارٹی کے دفتر کا گھیراو¿ بھی کریں۔ذہن نشیں رہے کہ وشو بھارتی یونیورسٹی انتظامیہ اور ریاستی حکومت کے مابین تنازعہ کے درمیان مغربی بنگال حکومت نے ایک اور فیصلہ لیا ہے۔ وشوا بھارتی یونیورسٹی کو حکومت نے سنتینیتیکن سے سرینکٹن جانے کا راستہ دیا تھا ، جسے اب ریاستی حکومت نے واپس لینے کا فیصلہ کیا ہے۔بول پور میں انتظامی اجلاس کے دوران بتایا گیا کہ یونیورسٹی انتظامیہ کو دی جانے والی سڑک کی حالت خراب ہے۔ یونیورسٹی انتظامیہ نے اس راستے پر کارگو گاڑیوں کی آمدورفت روک دی ہے۔ اس کے بعد وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے ایک بار پھر ریاستی حکومت پر قبضہ کرنے کے راستے کا اعلان کیا۔ محکمہ تعمیرات عامہ سڑک کی مرمت کرے گا۔وزیراعلیٰ ممتا بنرجی ، جو دو روزہ دورے پر بیر بھوم پہنچ گئیں ۔انہوں نے سوموار کو وشوا بھارتی پر ایک بڑا بیان دیا۔ انہوں نے کہا کہ شانتی نکیتن سے سرینکٹن جانے والا راستہ وشوا بھارتی نے بند کردیا ہے۔ حکومت کو اس سلسلے میں بہت سی شکایات موصول ہوئی ہیں۔ اس کے بعد ، حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ سڑک کو دوبارہ شروع کیا جائے گا۔ اس سلسلے میں وشوا بھارتی کو حکومت نے آگاہ کیا ہے۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments are closed.