Take a fresh look at your lifestyle.

بنگال میں 89فیصد لوگ ”کو موربڈ“ امراض سے جاں بحق ہوئے ہیں ۔ چیف سکریٹری

کولکاتا۔17اگست : بنگال میںکوویڈ ۔19 کی سردست کیا حالت ہے اور علاج و معالجے کے معاملے میں ڈاکٹروں کا رویہ کیا ہے اب ان ساری باتوں کی جان کاری کیلئے حکومت مغربی بنگال کوویڈ پیشنٹ سسٹم چالو کرنے کا ارادہ کرلیا ہے ۔ کولکاتا کے ایم آر بانگوڑ سمیت تین اسپتالوں میں یہ پہلے مرحلے میں ہی قابل عمل بنایا گیا ہے ۔ اس کے بعد بنگال کے 84عدد کوویڈ اسپتال میں اسے مزید توسیع دی جائے گی ۔ بنگال کے چیف سکریٹری راجیو سنہا نے نبنّو میں صحافیوں کو یہ بتایا کہ اب ریاستی محکمہ صحت کے ویب سائٹ سے ہی مریضوں کے ناطے رشتہ داروں کو علاج و معالجے سے متعلق تمام تفصیلات کمپیوٹر کے ایک لنک سے حاصل ہوجائے گا ۔ چیف سکریٹری نے اس بات کا بھی اعادہ کیا ہے کہ بنگال میں کوویڈ۔19کا مقابلہ کرنے کیلئے ریاستی محکمہ صحت نے ہر مثبت قدم اٹھاتے ہی ۔ اس وقت ریاست میں 11ہزار 775عدد کوویڈ کے مریضوں کے لئے بستروں کا انتظام ہے اس کے بعد 35فیصد مزید بستروں کا اضافہ کیا گیا ہے ۔ جتنے بھی طبی بستر ہیں ۔ وہ سارا کیجسن سے بھی لیس ہے اور تمام طبی آسانیاں بھی اسی بستر سے ملحق ہیں۔ بنگال میں ڈاکٹروں نے کوویڈ 19کے مریضوں کے علاج و معالجے میں اتنا دھیان دیا ہے کہ اب بستروں میں آنے والے مریضوں کی تعداد میں خاطر خواہ کمی دیکھی جارہی ہے ۔ چیف سکریٹری نے یہ بھی کہا کہ جو سنگین و مشکوک دن تھے وہ اب آہستے آہستے دور ہورہے ہیں اس وقت اسپتالوں میں کل 5173مریض زیر علاج ہیں ان میں سے 6فیصد کی حالت میں سدھار آچکا ہے ۔ جبکہ 997لوگوں میں عامیانہ اثر دیکھا جارہا ہے ۔ بقیہ 2263لوگ اس بیماری سے کمزور ہوچکے ہیں ۔ سردست اس مرض کے متاثرین 22ہزار لوگ آئسولیشن ہوم و سیف ہوم میں زیر علاج ہیں۔ اب تک جتنے بھی لوگ اپنی جان ہار چکے ہیں ان میں سے 89فیصد لوگ دیگر امراض سے ہلاک ہوئے ہیں۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments are closed.