Take a fresh look at your lifestyle.

اپریل20 سے کچھ سرکاری دفاتر کھولنے کا فیصلہ

0

کولکاتا,16اپریل:مرکزی حکومت کی ہدایت پرریاست میں کچھ سرکاری دفاتر کھولنے کاممتا حکومت نے فیصلہ کیاہے۔آئندہ 20اپریل سے سرکاری ملازمین دفتر جا پائیں گے۔لیکن ایک ساتھ رہنے کی ممانعت کی گئی ہے۔وزیر اعلی ممتا بنرجی نے نبننو میں بتایاکہ دفاتر کھولنے کے معاملے میں ڈپٹی سکریٹری اور اعلی عہدیداروں کو 20اپریل سے دفتر میں حاضر ہونا ہوگا۔ لیکن روزانہ نہیں باری باری ایک دن کرکے دفتر میں حاضر ہونا ہوگا۔انہوں نے بتایا کہ مرکزی حکومت نے کم از کم 30فیصدتک دفاتر میں حاضری کی اجازت دی ہے۔ لاک ڈاﺅن کے درمیان ہی ریاست میں مٹھائی کی دکانیں،پھول بازار اور چائے باغات کھول دیئے گئے ہیں۔اب جوٹ مل کھولے جائینگے۔ وزیر اعلیٰ کے اس فیصلے سے بیرکپور صنعتی علاقہ کے مزدور کافی خوش ہیں۔لاک ڈاﺅن کے درمیان صحت کے متعلق ہدایتوں پرعمل کرتے ہوئے جوٹ مل کے مزدور کام کرنے کو تیار ہیں۔ریاست کے تمام جو ملوں کو کھولنے کا فیصلہ کیاگیا ہے۔ لاک ڈاﺅن کے درمیان 15فیصد مزدوروں کو لے کر جوٹ مل میںکام شروع ہوگا۔ تمام مزدوروں کو باری باری کام ملے گا۔ لاک ڈاﺅن کے درمیان جوٹ کے بستوں کی قلت دور کرنے کے لئے 25فیصد مزدوروں کو لے کر مرکزی حکومت نے ریاست کے 18جوٹ مل کھولنے کا فیصلہ کیا ہے۔جوٹ کارپوریشن اف انڈیا نے ریاستی حکومت کو خط لکھ کر اس فیصلے سے اگاہ کیا ہے۔ لیکن ریاستی حکومت نے یہ واضح کردیا ہے کہ صرف 18نہیں اگر کھولنا ہے تو تمام جوٹ ملیں کھلیں گی۔ایسا نہیں ہواتو مزدوروں کے ایک حلقہ کے ساتھ نا انصافی ہو گی۔آئندہ 20 اپریل سے چند مزدوروں کو لے کر ریاست کے تمام جوٹ مل کھولنے کی بات ہے۔ایک دوسری اطلاع کے مطابق آئندہ یکم مئی سے ریاستی حکومت انناداتری،ایپ کے ذریعہ دھان کی خریداری کرے گی۔ ریاستی وزیر خوراک جیوتی پریہ ملک نے بتایاکہ ٹال فری نمبر پر فون کرنے پر کسانوں کے پاس جاکر دھان کی خریداری کی جائے گی۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Leave A Reply

Your email address will not be published.