Take a fresh look at your lifestyle.

نیو ٹاون میں پروفیسر کے ہاتھوں پروفیسر کے کنبہ کی زد وکوبی

0

نیو ٹاون،21نومبر: نیوٹاون پولیس اسٹیشن کے علاقے میں مقیم سینٹ زیورس کے شعبہ کیمسٹری کے سربراہ انکور رائے اور ان کے اہل خانہ کو اس کے پڑوسی گوربنگ یونیورسٹی میں پروفیسر مہدی حسین کے اہل خانہ نے پیٹا۔ پولیس نے الزام کی بنیاد پر تفتیش شروع کردی ہے۔ ذرائع کے مطابق انکور کے مطابق مبینہ طور پر اس کی بیوی اور بیٹے کو لوہے کی سلاخوں سے پیٹا گیا۔ نیوٹاو¿ن پولیس اسٹیشن میں شکایت درج کرنے کے بعد پولیس نے واقعے کی تفتیش شروع کردی ہے۔ تاہم ، ابھی تک اس واقعے میں کسی کو گرفتار نہیں کیا گیا ہے۔ پولیس نے ابتدائی طور پر قیاس کیا کہ یہ واقعہ ایک پرانے تنازعہ کی وجہ سے پیش آیا ہے۔ انکور نے چارج شیٹ میں بتایا کہ وہ ڈاکٹر کو دکھانے کے بعد اپنی اہلیہ اور بیٹے کے ساتھ گھر لوٹ رہے تھے۔ اپنی کار پارک کرنے اور لفٹ کے پاس جاتے ہوئے 4-5 شرپسندوں نے اچانک اس پر حملہ کردیا۔ ان میں گوربنگیونیورسٹی کے پروفیسر مہدی حسین کے دو بھائی بھی تھے۔ انکور کی اہلیہ شبینہخاتون کو پہلے لوہے کی چھڑی سے پیٹا گیا۔ جب انہوں نے اسے بچانے کی کوشش کی تو شرپسندوں نے انکور کو بھی زدوکوب کیا۔ ان کے 14 سالہ بیٹے کو بھی رہا نہیں کیا گیا تھا۔تفتیش کرنے پرپولیس کو معلوم ہوا کہ ایک سال قبل دونوں خاندانوں کے مابین گاڑی پارک کرنے سے متعلق تنازعہ پیدا ہوگیا تھا۔ اب یہ کیس عدالت میں زیر سماعت ہے۔ تفتیشی افسران کا خیال ہے کہ یہ حملہ تنازعہ کی وجہ سے ہوا ہے۔ تاہم انکور نے کہا کہ انہیں اس بارے میں کچھ سمجھ نہیں ہے کہ حملہ کیوں ہوا۔ مہدی حسین اسی بلڈنگکی چوتھی منزل پر رہتا ہے۔ واقعے کے بعد سے ہی فلیٹ کو لاک لاک کردیا گیا ہے۔ انہوں نے فون پر کہا کہ یہ الزامات بالکل بے بنیاد ہیں۔ میں کولکاتا سے باہر ہوں۔ میرے بھائیوں پر حملہ ہوا ہے۔ وہ خوف کے مارے گھر چھوڑ گئے۔ خبر لکھے جانے تک کسی کی گرفتاری کی اطلاع نہیں ہے۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Leave A Reply

Your email address will not be published.