Take a fresh look at your lifestyle.

عوام کو دھوکہ د کر راشن ہڑپنے کا الزامقصوروار پائے جانے پر سخت کارروائی : کونسلر

0

ولکاتا 15اپریل(شبانہ صدیقی ) جیسا کہ ریاستی حکومت نے راشن کے متعلق اعلان کیا ہے کہ مفت میں ہر ماہ ایک فرد کو 3 کیلو گرام گیہوں اور 2کیلو گرام چاول اپریل تا ستمبرملے گا مگر راشن ڈیلرس ان میں سے آدھا مال ہڑپ لے رہے ہیں اور آدھامال صارفین کو دے رہے ہیں۔جس سے صارفین میں شدید ناراضگی پائی جا رہی ہے۔یہ معاملہ کل تک اضلاع میں عام تھا مگر اب اس نے شہر کے بھی بیشتر علاقوں میں طول پکڑ لیا ہے۔خیال رہے کہ ریاستی حکومت نے راشن کارڈ کی نوعیت کے مطابق صارفین کےلئے راشن معین کر دی ہے مگر ان سب کے باوجود کچھ بے ضمیر ڈیلرس ایسے ہیں غریب لوگوں کے حصے کا راشن ہڑپنے سے بھی گریز نہیں کر رہے ہیں۔اس طرح کا معاملہ شہر کے متعدد علاقوں سے موصول ہو ئی ہیں کہ راشن دکانوں میں PHHکٹیگری والے صارفین کو 3کیلو گیہو ںکے بجائے دیڑھ کیلو گیہو ںمل رہا ہے جب ان لوگوں نے راشن ڈیلر سے جواب طلب کیا تو ان کا یہ کہنا تھا کہ اتنا ہی دینے کو ہمیں کہا گیا ہے لہٰذا اس سے زیادہ کی امید نہیں کرنا۔جبکہ حکومت کے مطابق RKSY,PHH,AAYوغیرہ کارڈ والوں کو فی کس 3کیلو گرام گیہوں اور 2کیلو گرام چاول ملے گا،ان سب کے باوجود عوام کو دھوکہ دیا جارہا ہے۔یہ معاملہ وارڈ نمبر ایک کے تحت کاشی پور کے بیساکھ بگان بازار میں واقع راشن دکانوں کا ہے جہاں برسوں سے راشن ڈیلرس اپنی من مانی کر تے آ رہے ہیں چونکہ یہاں کے باشندوں میں بیداری کی کمی ہے اس لئے بے ایمان راشن ڈیلرس اپنی من مانی میں کامیاب ہو جاتی ہیں۔خیال رہے کہ یکم اپریل کو یہاں کی راشن دکانوں نے ایک ہفتہ کی راشن کو 15 روزہ راشن بتا کر لوگوں کو خوب بیوقوف بنایا اور آج جب پھر یہاں کے لوگ راشن لینے گئے تو اس سے بھی کم راشن دے کر لوگوں کی آواز کو دبا دیا۔اس سلسلے میں جب وارڈ کی کونسلر سیتا جیسوارا سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ ایسا تو کرنا نہیں چاہئے اور اگر ایسا کوئی راشن ڈیلر کرتے ہوئے پکڑا گیا تو اس کے خلاف قانونی کارروائی ہوگی۔ایک نمبر وارڈ کی کونسلر نے یہ یقین دلایا ہے کہ انکوائری کے ذریعہ وہ معاملے کے طے تک پہنچیں گی۔ اس طرح کامعاملہ وارڈ نمبر 66کے تحت توپسیا اور تلجلا علاقوں میں بھی پیچ آرہا ہے۔ یہاں کی کونسلر فیض احمد خان نے نمائندہ کو بتایا کہ میرے وارڈ میں بیشتر شکایتیں سن راشن ڈیلروں کی خلاف موصول ہو ئی ہیں کہ ایک ماہ کا بولا گیا تھا مگرلوگوں کو نصف ماہ کا ہی راشن مل رہا ہے جس سے لوگوں کی اندر برہمی پائی جا رہی ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ اد مسئلے کو حل کرنے کی مقصد کے تحت ہم نے گزشتہ روز وارڈ کے تمام راشن ڈیلروں کے ساتھ میٹنگ بھی کی اور عوام کو پورا راشن دینے کی اپیل بھی کی ہے۔جب نمائندہ نے ریاستی وزیر خوراک جیوتی پریو ملک سے رابطہ کیا تو انہوں نے فون پر بتایا کہ حکومت نے ایک ماہ کا راشن دینے کا اعلان کیا ہے اور اگر کوئی بھی راشن ڈیلر اد کی خلاف ورزی کرے گا تو اس کے خلاف سخت کارروائی ہوگی۔راشن نظام میں بدعنوانی کی خبریں خضرپور اور مرکزی کولکاتا کے کیلا بگان سے بھی موصول ہوئی ہیں کہ وہاں بھی راشن ڈیلر من مانی کر رہے ہیں لہذا نمائندہ نے وارڈ۔ 77کے کونسلر نظام الدین شمش سے جب اس سلسلے میں پوچھا تو انہوں نے کہا کہ اپریل کی شروعاتی دور میں اد طرح کا معاملہ پیش آیا تھا مگر اب ہماری کوششوں سے یہ قابو میں ہے۔ جبکہ وارڈ نمبر 39کےتحت کیلا بگان کے کونسلر محمد جثیم الدین نے بتایا کہ اگر میرے وارڈ میں اس طرح کی حرکت کرتا کوئی بھی راشن ڈیلر پکڑا گیا تو میں خود اسے پولس کے حوالے کردونگا۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Leave A Reply

Your email address will not be published.