Take a fresh look at your lifestyle.

پرائیوٹ اسکولوں کی نئی کمیٹی کی سفارشات پر کورٹ کا فیصلہ14ستمبر کو

کولکاتا،8ستمبر: نا معلوم کرونا کے موسم میں پرائیوٹ اسکولوں کے اخراجات و آمدنی کا سارا حساب کتاب کولکاتا ہوئی کورٹ کے ایما پر تشکیل شدہ کمیٹی کے دو ممبران کو سونپا گیا تھا۔ اس کمیٹی کو لگ بھگ 145 اسکول کی رپورٹ دی گئی تھی اور اس رپورٹ کو دیکھنے کے بعد کمیٹی غیر مطمئن رہی۔ کمیٹی کے مطابق ان میں سے کئی اسکول تو سرسری رپورٹ داخل کیا ہے اور کئی تو ماہانہ آمدنی و خرچ کا حساب پیش کیا۔ یہ در اصل قانون سے بچنے کے لئے ایسا کیا گیا ہے کمیٹی نے جب کورٹ میں اس کا خلاصہ کیا تو کورٹ نے کہا کہ جس وجہ سے رپورٹ دینے کی ہدایت کی گئی تھی وہ تو ناکام ہوا۔ زیادہ تر اسکولوں نے قانون سے بچنے کے لئے عبوری رپورٹ پر ہی اکتفا کیا۔ حالانکہ ان اسکولوں میں سماج کے ہر طبقے کے لوگوں کے لہجے پڑھنے آتے ہیں۔ مگر اس وقت جو حالات ہوئے ہیں اس سے صاف پتہ چل رہا ہے کہ گارجین کی مالی حالت زیادہ بہتر نہیں ہے اب کورٹ کا یہ کام ہے کہ ان کی پریشانیوں کو دور کی جائے۔ اسی پریشانیوں کے پیش نظر کورٹ نے یہ تجویز پیش کی ہے کہ اسکولوں کے معتبر ٹیچر یا پرنسپل کے ساتھ اسکول کے سینئر تین عدد ٹیچرس و تین عدد گارجین کو لے کر اسکولوں کی کمیٹی بنائی جائے وہی کمپنی بتائے گی کہ فیس کے معاملے میں کتنی رعایت کی جائے گی ۔14ستمبر کو عدالت اس پر اپنے رائے گی۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments are closed.