Take a fresh look at your lifestyle.

ڈراپ آﺅٹ کو روکنے میں بنگال حکومت سر فہرست :ترنمول

کولکاتا،31،اکتوبر:مغربی بنگال ترنمول کانگریس نے دعویٰ کیا ہے کہ حکومت بنگال نے ڈراپ آﺅٹ کو روکنے کے لئے قابل ذکر کام کیا ہے۔ ترنمول کانگریس نے کہا ہے کہ وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی کی قیادت میں حکومت نے اسکولوں کو درمیان میں چھوڑنے والے بچوں کو روکنے کے لئے متعدد اقدامات کیے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ ڈراپ آﺅٹ بچوں کی تعداد کم ہوگئی ہے۔پارٹی نے دعویٰ کیا کہ سال 2018-20 کے دوران اس معاملے میں مغربی بنگال سرفہرست ہے۔ ترنمول کانگریس نے ایک بیان جاری کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ سالانہ ریاستی تعلیم کی رپورٹ (ASER ، 2020) کے مطابق بچوں کی ڈراپ آﺅٹ شرح 3.3 فیصد سے کم ہوکر 1.5 فیصد ہوگئی ہے۔ دوسری طرف قومی سطح پر یہ شرح 4 فیصد سے بڑھ کر 5.5 فیصد ہوگئی ہے۔بیان میں سروے کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا گیا ہے کہ کرناٹک ، تلنگانہ اور راجستھان جیسی کچھ بڑی ریاستوں میں بچوں میں ڈراپ آﺅٹ کی شرح 11.3 فیصد تک پہنچ گئی ہے۔ یہ سروے 26 ریاستوں کے 584 اضلاع کے 16974 دیہاتوں میں 52227 کنبے کے درمیان کیا گیا ہے۔مزیدکہا گیا ہے کہ سروے کے مطابق مغربی بنگال بچوں کو درسی کتابیں فراہم کرنے کے معاملے میں بھی پہلے نمبر پر ہے۔ ریاست میں اس کی شرح 99.7 ہے ، جبکہ اترپردیش ، راجستھان ، گجرات ، آندھراپردیش ، مہاراشٹر میں یہ بالترتیب 79.6 فیصد ، 60.4 فیصد ، 95 فیصد ، 34.6 فیصد اور 80.8 فیصد ہے۔وہیںکویڈ 19 وبا کے دوران ڈیجیٹل اور دیگر الیکٹرانک ذرائع کے ذریعہ تعلیم جاری رکھنے کے مغربی بنگال کے اقدام کو بھی اس رپورٹ میں سراہا گیا ہے۔کورس کمیٹی کے چیئرمین ابھا مجومدار نے کہا کہ ریاستی حکومت اسکول کی مستقل کوشش کے بعد کہ یہ یقینی بنائے کہ بچے اسکول آنا نہ چھوڑیں، ایک بھی بچہ مالی وجوہات کی بناءپراسکول نہیں چھوڑپائے کیونکہ تعلیم بنیادی حق ہے۔جس کے ذریعہ مہذب معاشرہ تشکیل پاتا ہے۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments are closed.