Take a fresh look at your lifestyle.

مخدوش حالات میں بھی دفتر، کچہری کھول دیئے گئے مگر لوکل ٹرینیں بدستور اپنی جگہ جمی ہے

کولکاتا،13اکتوبر: کرونا کے خوف کے ساتھ نئے حفاظتی اصولیات کے ساتھ دفتر و صنعتی ادارے کھل چکے ہیں مگر اس مہلک مرض کی دہشت کی وجہ سے ابھی تک اس ریاست میں لوکل ٹرینیں رکی پڑی ہوئی ہیں۔ پھر بھی ضرورت کے تحت کئی عدد اسپیشل ٹرینیں پٹری پر دوڑ رہی ہیں۔ بایاں محاذکے اہم لیڈر سجن چکر ورتی نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ اب حالات جیسے بھی ہو غریبوں کے مفادات کے تحت لوکل ٹرین کو چالو کردینا چاہئے۔ سجن نے ٹویٹ کے ذریعہ لکھا کہ اس وقت آفس، کچہری تو کھول دیئے گئے ہیں لوگ زیادہ کرائے دے کر اپنے کام سے جڑ رہے ہیں۔ حالانکہ گاو¿ں دیہات کے آنے والے لوگوں کا زیادہ انحصار لوکل ٹرین پر ہی ہوتا ہے۔ ایسے میں اگر ٹرین و سرکاری بسیں نہیں چلیں گی تو غریب لوگ کیسے آمد و رفت کریں گے؟ ہونا تو یہ چاہئے کہ تمام حفاظتی تدابیر کو بروئے کار لا کر لوکل ٹرینوں کو چالو کر دینے میں حکومت پہل کر دے۔ بنگال میں کرونا کی حالت بدستور وہی ہے روزانہ یہ مرض بڑھ رہا ہے اموات بھی ہو رہی ہےں۔ اسی سوموار کو ساڑھے تین ہزار نئے کیس بھی سامنے آئے ہیں اور اس بیماری کو پھیلنے میں وزیر اعلیٰ کا ہاتھ زیادہ ہے۔ اس سے بھی انکار نہیں گرچہ وزیر اعلیٰ نے بنگال کے لوگوں کو ہوشیار کر دیا ہے کہ ہر کوئی محتاط رہے۔یہ بیماری بڑھ رہی ہے۔ ڈاکٹر بھی چوکنا ہو گئے ہیں ڈاکٹروں نے خط لکھ کر بھی انہیں ساری جانکاری فراہم کر دی ہے۔ حالانکہ منگل کے رپورٹ میں واضح ہو گیا ہے کہ پورے ملک میں یومیہ اس مرض کی شدت میں کمی آئی ہے۔ گزشتہ 24گھنٹے کے اندر پورے ملک میں متاثر55ہزار342 لوگ ہوئے اور شرح اموات706تک پہنچی ہے۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments are closed.